Home / Stomach diseases / اگر معدہ کا السر ہے تو سنت نبوی کے مطابق صرف شہد کھائیں اور السر سے نجات پائیں

اگر معدہ کا السر ہے تو سنت نبوی کے مطابق صرف شہد کھائیں اور السر سے نجات پائیں

السر معدہ سے مراد معدہ کا زخم ہے۔ یہ مرض آج کل بہت عام ہے اس کی وجہ بد پرہیزی، آرام طلب زندگی اور ہوٹلوں کے کھانوں کا زیادہ تر استعمال ہے۔السر معدہ سے مراد معدہ کا زخم ہے۔ یہ مرض آج کل بہت عام ہے اس کی وجہ بد پرہیزی، آرام طلب زندگی اور ہوٹلوں کے کھانوں کا زیادہ تر استعمال ہے کیونکہ ہوٹلوں کے کھانوں میں زیادہ ترگرم مصالحہ جات کا استعمال بہت کثرت سے ہوتا ہے۔ جس کی وجہ سے معدہ میں تیزابیت بڑھ جاتی ہے۔ جو کہ اکثر اوقات معدہ کے السر کا باعث بنتی ہے۔ اس کے علاوہ السر معدہ کا باعث غم و فکر اور الم وغیرہ بھی ہیں۔ اکثر عشق و محبت میں ہارے ہوئے لوگ بھی اس مرض کا شکار ہو جاتے ہیں ۔ السر معدہ کی وجہ سے عموماََ معدہ میں درد رہتا ہے۔ اور رات کو تیزابیت زیادہ ہوجاتی ہے۔ مریض کو کبھی کبھار قے کے ساتھ خون بھی آتا ہے اور غذا صحیح طور پر جزوبدن نہیں بنتی۔ شہد اس مرض کا اکسیر ترین علاج یعنی دواء ہے مگر اس کے ساتھ ساتھ اگر دوسری ادویہ بھی استعمال کی جائیں تو سونے پر سہاگہ کا کام کرتی ہیں۔ السر معدہ کے لیے مجرب ترین نسخہ یہ ہے۔
طباشیر (اصلی یا انڈیا کی )100گرام۔کلونجی (صاف شدہ)100گرام۔ہلدی (عام استعمال والی) 100گرام۔پودینہ (صرف صاف پتے) 100گرام۔بادیان (سونف صاف شدہ) 100گرا۔شہد (خالص ) 100گرام
تمام چیزوں کا سفوف نہایت باریک تیار کر لیں۔ شہد کو گرم کر کے اس سفوف کو شہد میں ڈال دیں اور تھوڑی دیر پکائیں جب سب چیزیں یک جان ہو جائیں تو اتار لیں۔ یہ معجون ہر کھانے سے ایک گھنٹہ پہلے دو چار گھونٹ آدھا گلاس پانی میں ملا کر پی لیں۔ اس دو ا کے استعمال کے بعد ایک گھنٹہ تک کچھ نہ کھائیں نہ ہی پئیں ۔ انشااللہ معدہ کا السر دنوں میں ٹھیک ہو جائے گا۔ اگر یہ نسخہ تیار کرنے میں کوئی مسئلہ ہو تو پھر صرف شہد ہی کافی ہے۔
اگر صرف شہد استعمال کرنا ہو تو ایسے استعمال کریں:شہد (30 ملی گرام) صبح ناشتے سے ڈیڑھ یا دو گھنٹے قبل، اور دوسری خوراک کھانے کے تین گھنٹے کے بعد کھائیں اور یہ عمل دو ماہ تک جاری رکھیں انشااللہ شفا ہو گئی۔ لیکن اگرمرض پھر بھی باقی رہ جائے تو 15 دن کے وقفے سے اس کا استعمال پھر سے شروع کر دیں۔

السر معدہ میں احتیاط

سرخ مرچ ،مصالحے، سرکہ، بہت تیز نمک (زیادہ مقدار میں) وغیرہ کے علاوہ گھی میں تلی ہوئی اشیاء سے پرہیز کریں۔ کھانا نہ تو بہت زیادہ گرم ہو اور نہ ہی بلکل ٹھنڈا، بلکہ نارمل گرم ہو تو معدہ اس کو جلد قبول کر لیتا ہے۔ معدہ کے السر میں ٹھنڈا دودھ یا آئس کریم بھی تھوڑی مقدار میں کھالیں تو اس عمل سے معدہ میں درد اور تیزابیت کم ہوجاتی ہے۔ یعنی معدہ میں زیادہ تیزابیت نہیں بنتی جس کی وجہ سے معدہ کا زخم بھی خراب نہیں ہوتا۔